1 comments

Peer e Kamil By Umera Ahmed

Published on Monday, April 21, 2014 in

جب تک انسان کو پانی نہیں ملتا، اسے یونہی لگتا ھے کہ وہ پیاس

  سے مر جائیگا مگر پانی کے گھونٹ بھرتے ہی وہ دوسری چیزوں
 

کے بارے میں سوچنے لگتا ھے، پھر اسے خیال بھی نہیں آتا کہ وہ

 پیاس سے مر بھی سکتا تھا۔۔۔۔

  کوئ پیاس سے نہیں مرتا۔۔۔۔۔ مرتے تو سب اپنے وقت پہ ہی ہیں اور

  اسی طرح، جسطرح اللہ چاہتا ھے مگر دنیا میں اتنی چیزیں ہماری 

پیاس بن جاتی ہں کہ پھر ھمیں زندہ رہتے ہوئے بھی بار بار موت کے

 تجربے سے گزرنا پڑتا ھے۔۔۔۔۔

Spread The Love, Share Our Article

Related Posts

1 Response to Peer e Kamil By Umera Ahmed

April 24, 2014 at 4:30 AM

Great lines By uera admed

Add Your Comment